Conjunctivitis Ashob e Chashm ka Ilaj

Conjunctivitis Ashob e Chashm ka Ilaj

آشوب چشم: علامات، احتیاط اور آسان گھریلو علاج

آنکھیں ایک بہت بڑی نعمت ہیں اور اس بینائی کی حفاظت کرنا نہایت ضروری ہے۔ کیوںکہ آنکھیں جسم کا ایک بہت ہی نازک اور حساس حصہ ہیں اس لیے ہماری ذرا سی غفلت بھی ہمارے لیے نقصان دہ ثابت ہوسکتی ہے۔ آج کے اس مضمون میں ہم آپ کو آشوب چشم کی معلومات فراہم کریں گے کہ یہ کیا ہوتا، آشوب چشم کیوں ہوتا ہے اور آسان گھریلو علاج (Conjunctivitis Ashob e Chashm ka ilaj) کیا ہے۔

آشوب چشم کیا ہے؟

آشوب چشم کو آنکھ کی جھلی کی سوزش بھی کہتے ہیں۔ باریک جھلی (آنکھ کی جھلی) جو آنکھ کے سفید حصے (سفیدہ چشم) کو ڈھانپتی ہے۔ اس جھلی کی سفید رنگت گلابی یا سرخ رنگ میں تبدیل ہو جاتی ہے۔

آشوب چشم ایک موسمی وباء ہے جوہر سال مون سون میں اور گرم موسم میں زیادہ پھیلتی ہے۔ آشوب چشم زیادہ تر ایک وائرس کے باعث ہوتی ہے۔ یہ بیکٹیریا کے کسی انفیکشن یا الرجی کے رد عمل کے باعث بھی ہو سکتی ہے۔

آشوب چشم کی علامات

آشوب چشم عموماً وائرل متعدی امراض کے باعث ہوتا ہے جو عام زکام کے ساتھ منسلک ہیں۔ یہ بیکٹیریئل متعدی امراض یا الرجی کے باعث بھی ہو سکتا ہے۔

جب آشوب چشم کی بیماری ہوتی ہے تو آنکھیں سرخ ہوجاتی ہیں۔ اور پپوٹوں پر سوزش آ جاتی ہے۔ آنکھوں میں بھاری پن محسوس ہوتا ہے۔ آنکھوں سے پانی بہتا ہے اور رطوبت بھی نکلتی رہتی ہے۔ رات کو سوتے وقت آنکھ سے صاف یا پیلے سبز مواد کا اخراج ہونے کی وجہ سے آنکھیں چپک جاتی ہے۔ جس سے آنکھیں کھولنا مشکل ہوتا ہے۔ اس بیماری سے آنکھوں میں شدید درد ہوتا ہے۔ آنکھوں میں میں خارش ہوتی ہے۔

وائرس کے باعث ہونے والا آشوب چشم دونوں آنکھوں کو متاثر کرتا ہے۔ یہ دیگر زکام کی علامات کے ساتھ بھی منسلک ہو سکتا ہے۔ وائرس سے متاثر ہونے کی وجہ سے آنکھ سرخ ہو جاتی ہے اورتکلیف کی شدت سے ایسا محسوس ہوتا ہے کہ آنکھ میں ریت گر گئی ہو۔ ایک آنکھ کے متاثر ہونے کے بعد دوسری آنکھ عموماً 48 گھنٹے بعد متاثر ہو جاتی ہے۔

آشوب چشم میں احتیاط

آشوب چشم ایک سے دوسرے کو لگنے والا یعنی چھوت کا مرض ہے جومتاثرہ فرد کے زیر استعمال اشیا ء خصوصاً تولئے رومال یا آلودہ ہاتھ ملانے سے ایک سے دوسرے کو لگتی ہے۔

اس لیے ضروری ہے کہ ایسے افراد جو آشوب چشم سے متاثر ہوں وہ بار بارصابن یالیکوئڈ سوپ سے ہاتھ دھوئیں۔ آنکھوں سے بہنے والے پانی کو ہاتھ کی بجائے ٹشو پیپر سے صاف کر یں۔ کسی قسم کی پیچیدگی کی صورت میں فوری طور پر ہسپتال یاماہر امراض چشم سے رجوع کریں۔

آشوب چشم میں مریض کو اپنی غذا پر بھی توجہ دینی چایئے۔ ہلکی غذا کا استعمال کرنا چائیے۔تلی ہوئی اور میٹھی اشیاء سے پرہیز رکھیں۔ اگر مریض سگریٹ پینے کا عادی ہو تو دوران آشوب چشم سگریٹ پینے سے گریز کرے۔

آشوب چشم کا گھریلو علاج

عام طور پر آشوبِ چشم کا علاج ٹھنڈے پانی کے چھینٹے مارنے سے ہی ہو جاتا ہے۔ آشوب چشم سے متاثرہ مریضوں کو چاہئے کہ وہ ٹھنڈے و صاف پانی یا عرق گلاب سے آنکھیں بار بار دھوئیں ‘خالص شہد سلائی سے لگانا مفید ہے علاوہ ازیں عرق گلاب بطور آئی ڈراپس استعمال کریں یہ نسخہ بارہ سال سے کم عمر بچوں کیلئے نہیں ہے انہیں صرف صاف ٹھنڈے پانی کا استعمال کروائیں۔

دھوپ کی عینک کا استعمال اوربرف سے آنکھوں کی ٹکور فائدہ مندثابت ہوتی ہے یاد رہے برف صاف پانی کا ہو۔ ٹھنڈک سے آشوب چشم کاوائرس کمزور پڑ جاتاہے۔

کسی قسم کی پیچیدگی کی صورت میں فوری طور پر ہسپتال یاماہر امراض چشم سے رجوع کریں۔ آشوب چشم میں مندرجہ بالا بے ضرر گھریلو علاج کے علاوہ طرح طرح کی ادویات ازخود استعمال کرنے سے گریز کرنا چاہئے کیونکہ غلط دوا کے استعمال سے قرنیہ متاثر ہونے کا شدید خطرہ ہوتا ہے۔