jaman k fayde

Jaman k Faiday

جامن اور صحت و تندرستی کے ٹوٹکے

جامن موسم گرما کا پھل ہے۔ جامن نا صرف دیکھنے میں منفرد ہے، بلکہ جامن کا ذائقہ بھی انتہائی منفرد ہے۔ جامن کا مزاج سرد خشک درجہ دوم ہے۔ جامن صحت کے حوالے سے انتہائی اہم اور مفید پھل ہے۔ کراچی میں جامن کے درخت کئی جگہ پر عام پائے جاتے ہیں۔ آج ہم اس مضمون میں جامن کے صحت کے حوالے سے فوائد Jaman k Faiday بتائیں گے۔

جامن کو سندھی زبان میں جموں، انگریزی میں Jambul یا Java Plum کہتے ہیں۔ جامن کا نا صرف پھل بے انتہا فوائد ہیں بلکہ جامن کی گھٹلیاں اور پتے بھی بہت سی بیماریوں میں کارآمد ہیں۔ جامن معدہ ،آنتوں کی جلن،خراش اور کمزوری دور کرنے والی بے مثل غذا ہے۔

جامن اسٹارچ کو انرجی میں تبدیل کرکے بلڈ شوگرکی سطح کو نارمل رکھنے میں مدد کرتاہے۔ شوگر کے مریضوں کو روزانہ جامن کھانا چاہئے۔ شوگر کے مریض اگر کبھی کبھار آم کھالیں تو اس کے بعد جامن کھانے سے شوگر لیول اعتدال پر رکھا جاسکتا ہے نیز اس سے آم کی حدت بھی معتدل ہوجاتی ہے۔

جامن کے فائدے Jaman k Faiday

جامن کی عام طور پر تین اقسام پائی جاتی ہیں۔ جامن چھوٹا بھی ہوتا ہے جسے دیسی جامن کہتے ہیں اور بڑا بھی جو پھلندا کہلاتا ہے جبکہ ایک تیسری قسم بھی ہوتی ہے جس کا گودا بہت کم ہوتا ہے۔ جامن کے فائدے مندرجہ ذیل ہیں:

جلد کی خوبصورتی کے لیے جامن کا استعمال

موسم گرما اور برسات میں پھوڑے پھنسیوں سے محفوظ رہنے کیلئے جامن نہایت مفید ہے۔ چہرے کے داغ دھبے’ چھائیاں’ جامن یا جامن کے شربت کے مسلسل استعمال کرنے سے دور ہوجاتی ہیں اور چہرے کی رنگت نکھر جاتی ہے۔

چہرے کی شادابی’ داغ’ دھبے’ چھائیاں دور کرنے کیلئے جامن کا بیرونی استعمال بھی کیا جاتا ہے اس مقصد کیلئے جامن کی گٹھلیوں کو پانی میں رگڑ کر اس کا پیسٹ بنائیں اور چہرے پر اس کا لیپ کریں۔

جامن سے جریان کا علاج

جامن مردوں کے لیے خاص طور پر بہت مفید ہے۔ جامن مقوی باہ ہے۔ مادہ حیات کو گاڑھا کرتا ہے۔ جامن کی گٹھلیوں کو خشک کرکے ان کو باریک پیس لیں اور یہ سفوف تین گرام کی مقدار میں صبح نہار منہ اور شام پانچ بجے تازہ پانی سے بیس یوم استعمال کرنے سے انشاءاللہ بدخوابی و جریان کامرض جاتا رہے گا۔

ذیابیطس کا جامن سے علاج

تازہ جامن کھانے سے تو ذیابیطس کے مرض میں فائدہ ہوتا ہی ہے۔ لیکن جامن کا موسم نہ ہونے کی صورت میں ذیابیطس کیلئے جامن کی گٹھلیوں کا سفوف تین گرام صبح نہار منہ اور شام پانچ بجے کھانا چاہیے۔

مزید برآں ذیابیطس کے مریض اگر تخم جامن تیس گرام’ طباشیر نقرہ دس گرام’ دانہ الائچی خورد پندرہ گرام کاسفوف بنالیں اور صبح و شام ایک چمچ (چائے والا) ہمراہ تازہ پانی متواتر 21 روز استعمال کریں تو شوگر کنٹرول ہوجاتی ہے۔

زنانہ امراض کے لیے جامن فائدہ مند

لیکوریاکے مرض میں جامن کی گٹھلیاں پچاس گرام باریک پیس لیں اور اس میں کشتہ بیضہ مرغ دس گرام شامل کرلیں’ یہ سفوف دو سے تین گرام بلحاظ عمر صبح نہارمنہ اور شام پانچ بجے دودھ یا سادہ پانی سے استعمال کریں (دوران حیض استعمال نہ کریں) بیس روز کا استعمال شافی و کافی ہوتا ہے۔

خواتین میں کثرت حیض کو کنٹرول کرنے کیلئے جامن کے پتے سایہ میں خشک کرکے سفوف بنالیں اور روزانہ صبح نہار منہ ایک چمچ (چائے والا) ہمراہ تازہ پانی استعمال مفید ہوتا ہے۔

جامن سے دیسی نسخہ جات:

– جامن کا کھانا آواز کو درست اور گلے کو صاف کرتا ہے۔ رات کو سوتے وقت منہ سے پانی بہنے کی شکایت (بادی کیفیت) کو دورکرتا ہے۔

– اگر منہ پک جائے توجامن کے نرم پتے ایک پاؤ لے کر ایک کلو پانی میں جوش دیں بعد ازاں چھان کر کلیاں کرنے سے فائدہ ہوجاتا ہے۔

– جامن تیزابیتِ معدہ کا خاتمہ کرتا ہے۔ معدہ اور آنتوں کی کمزوری کو دور کرنے کیلئے ایک پاؤ جامن کے سرکے میں تین پاؤ چینی ملا کر سکنجبین بنائیں اور صبح وشام استعمال کریں۔

– بواسیر کا خون بند کرنے کیلئے بیس گرام جامن کے پتے ایک پاؤ دودھ میں رگڑ کر چھان کر پلانا مفید ہے۔

– جامن کی گٹھلیوں کا سفوف خونی اسہال اور پیچش میں بھی مؤثر ہے۔ اس سلسلے میں شربت انجبار کے ساتھ اس کا استعمال بہتر نتائج دے گا۔

– مسوڑھوں سے خون آنے کی صورت میں جامن کے پتوں کو پانی میں جوش دیکر تھوڑا سا نمک ملا کر غرغرے کرنا مفید ہے۔