thyroid-gland-problem-in-Urdu

Thyroid Gland ka Ilaj

تھائی رائڈ کیا ہے، کیوں ہوتی ہے اور آسان گھریلو علاج

انسانی جسم میں کئی غدود ہیں جو مختلف کام سرانجام دیتے ہیں جن میں گلے کے مقام پر واقع تھائی رائیڈگلینڈزایسے مخصوص قسم کے ہارمون تیار کرتے ہیں جن کا مقصد غذا سےحاصل ہونے والی توانائی کو حد اعتدال میں رکھنا ہوتا ہے۔ اس کی کمی و زیادتی سے ہمارا جسم مختلف بیماریوں کا شکار ہو جاتاہے۔ اس مضمون میں آپ کو ہم بتائیں گے کہ تھائی رائڈ کیا ہے، کیوں ہوتی ہے اور آسان گھریلو علاج (Thyroid Gland ka Ilaj) کیا ہیں۔

تھائی رائڈ ایک ایسی بیماری کا نام ہے جس کی بعض اوقات ڈاکٹر بھی صحیح تشخیص نہیں کرپاتے۔ تھائی رائیڈ کی بیماری کی مردوں میں شرح چار سے پانچ فیصد اور خواتین میں 10 سے 12 فیصد تک ہے تاہم 90فیصد مریضوں میں تشخیص نہیں ہوتی اس بیماری کی علامات ایسی ہیں جن میں سے کوئی نہ کوئی ہر شخص میں پائی جاتی ہے، اس لیے اس کی شناخت نہیں ہو پاتی۔

تھائی رائڈ بیماری سے بے شمار پیچیدگیاں ہو سکتی ہیں جس میں خواتین میں بانجھ پن بھی شامل ہے۔ ہمارے تھائیرائیڈ گلینڈ آئیوڈین کی کے ذریعے تھائیرائیڈ ہارمون بناتے ہیں ۔اگر آئیوڈین کی کمی ہوجائے تو تھائیرائیڈ گلینڈ میں سوزش آجاتی ہے۔

تھائی رائڈ کی خرابی کی علامات

جسم میں آئیوڈین کی کمی ایک یقینی امر ہے اور اس کی کمی سے مختلف امراض پیدا ہو جاتے ہیں،جن میں گلے کا گلہڑابھر آنا ظاہری علامت ہے، لیکن نظر نہ آنے والے امراض بہت خطر ناک ہیں۔ ڈپریشن، ذہنی طورپر معذوری، کمی تھائی رائڈ کی خرابی سے ہوتی ہے۔ تھائی رائیڈ،شوگر،مٹاپا سمیت دیگر بیماریوں کے جنم لینے کی مختلف وجوہات ہوتی ہیں اور ان کی نوعیت بھی مختلف ہوتی ہے لہٰذا ایسی صورت میں فوری ماہر ڈاکٹروں سے رابطہ کرنا چاہیے۔

تھائی رائیڈکی بیماری ہارمونل ڈیزیز ہے جس کی وجہ سے گلے میں سوجن ،چہرہ بگڑ جانا،سر کے بال جھڑ جانا،بانچھ پن سمیت دیگر بیماریاں بھی جنم لیتی ہیں۔ تھائی رائیڈ کے مرض سے آنکھیں موٹی ہوجاتی ہیں، کھلنے کے بعد بند نہیں ہوتی اور نابینا ہونے کا امکان بڑھ جاتاہے۔ دنیا بھر میں تھائی رائیڈ کی بیماری میں اضافہ دیکھنے میں آرہاہے جس میں چھوٹی لڑکیوں میں ابتدائی 10سال سے قبل جسمانی تبدیلی ہونا،بچوں کا قد نہ بڑھنا سمیت دیگر مسائل شامل ہیں۔

آئیوڈین کی کمی کی وجہ سے انسان کے ہاتھ ٹھنڈے ہونے لگتے ہیں ۔ہمارے تھائیرائیڈ گلینڈ آئیوڈین کی کے ذریعے تھائیرائیڈ ہارمون بناتے ہیں۔ اگر آئیوڈین کی کمی ہوجائے تو تھائیرائیڈ گلینڈ میں سوزش آجاتی ہے اور ہاتھ ٹھنڈے ہونے کے ساتھ شدید درد بھی ہوسکتی ہے۔

تھائی رائیڈ کی خرابی کا علاج Thyroid Gland ka Ilaj

قدرتی طور پر آیوڈین کی ایک اچھی مقدار سمندری خوراک جیسے مچھلی، جھینگے وغیرہ میں پائی جاتی ہے لیکن عام مشاہدے میں یہ بات دیکھنےمیں آئی ہے کہ آج کل اس مہنگائی کے دور میں قدرتی آئیو ڈین کی حامل سبزیاں، مچھلی اور گوشت وغیرہ عام مطلوبہ مقدار میں نہیں کھائے جا سکتے۔

اس کے علاوہ ایک بہت ہی آسان اور آزمودہ نسخہ درج ذیل ہے:

ڈیڑھ کپ پانی میں 2 انچ دارچینی کا ٹکڑا، 2عدد چھوٹی الائچی، چوتھائی حصہ چائے کا چمچ سونف اور ڈیڑھ انچ ادرک کا ٹکڑا لیکر کر اچھی طرح ابالیں۔ جب پانی ایک کپ رہ جائےتو نیم گرم ہونے پر پی لیں۔

طریقہ استعمال:

یہ قہوہ دن میں2 بار صبح 11 بجے اور سہ پہر 4 بجے پینا ہے۔ وقت کی پابندی لازمی کرنی ہے یہ وقت اس لئے کہ اگر آپ نے صبح 8 بجے بھی ناشتہ کرتے ہیں تو 3 گھنٹے میں معدہ اس کیفیت میں ہوتا ہے کہ نہ تو خالی اور نہ ہی بھرا ہوا یہ انتہائی آئیڈیل وقت مانا جاتا ہے۔

اس قہوہ سے ایک تو آپ کا وزن بہت جلدی اور تیزی سے کم ہونے لگے گا اور ساتھ ہی اللہ کے فضل سے تھائرائیڈ کے لیولز بھی نارمل ہونے لگیں گے اور مسلسل استعمال سے اس بیماری سے بھی جان چھٹ جائےگی اور سمارٹ بھی ہوجائیں گے۔